شیخ ادیبالی کون تھے | عثمان غازی کے روحانی سرپرست

شیخ ادیبالی کون تھے | عثمان غازی کے روحانی سرپرست

شیخ ادیبالی ، جو ترکی کے شہر اناک میں 1206 عیسوی میں پیدا ہوئے تھے۔شیخ ادیبالی ایک ترک صوفی شیخ تھے جو اپنے انصاف اور تعلیم کے لئے مشہور تھے۔ وہ بالیشیح کے نام سے بھی جانے جاتے تھے۔ شیخ ادیبالی نے ترکی کے شہر سوگوت میں عثمانی سلطنت کی بڑھتی ہوئی شکل اور پالیسیاں تیار کرنے میں اہم کردار ادا کیا۔ بنو تمیم قبیلے اور الخطر خاندان کی اولاد ہونے کی وجہ سے ، اس دور کی مسلم دنیا کے مذہبی حلقے میں ان کا بہت احترام کیا جاتا تھا ۔ بتایا جاتا ہے کہ ارتغل غازی اور اس کے بیٹوں نے شیخ ادیبالی کی جگہ پر قرآن مجید کا ایک مرتب ورژن دیکھا اور وہ بہت حیران ہوئے۔



قائی قبیلے کے سردار ارتغل غازی ، شیخ ادیبالی کے بہت قریب تھے۔ شیخ ادیبالی اکثر اسلام کی تعلیمات ارتغل تک پہنچاتے تھے۔ وہ اناطولیہ کی متنوع آبادی کے مختلف امور پر بھی گفتگو کرتے تھے۔ عثمان غازی ولد ارتغل غازی بھی اکثر اوقات شیخ ادیبالی سے ملنے آتے تھا۔ عثمان غازی کو ان کی صحبت میں رہنا پسند تھا اور اس طرح شیخ ادیبالی ان کے روحانی سرپرست بن گئے۔ بعدازاں ، شیخ کی تلوار سے نوازا۔


شیخ ادیبالی کے دو بیٹے تھے جن کا نام محمود پاشا اور محمد پاشا اور دو بیٹیاں تھیں جن کا نام ملہون خاتون اور رابعہ بالا خاتون تھا۔ شیخ ادیبالی کی درگاہ (مقدس مقام) کے دورے کے دوران ، عثمان غازی نے شیخ ادیبالی کی بیٹی رابعہ بالا خاتون کو دیکھا اور ان سے محبت ہوگئی۔ چنانچہ یہ ان کے ادیبالی درگاہ کے دوروں کی ایک اور وجہ بن گیا۔ عثمان غازی نے بھی شیخ ادیبالی سے رابعہ بالا خاتون سے اپنی محبت کا اعتراف کیا لیکن سماجی حیثیت کے فاصلے کی وجہ سے وہ عثمان سے اپنی بیٹی سے شادی کرنے پر راضی نہیں تھے۔

2,311 views10 comments

Disclaimer: This site does not store any files on its server. All contents are provided by non-affiliated third parties.

Copyright © 2020 GiveMe5. All rights reserved Privacy Policy

  • Facebook Social Icon
  • Twitter Social Icon
  • YouTube